حقائق پر مبنی چند سوالات،شوکت عزیز صدیقی سے

حقائق پر مبنی چند سوالات شوکت عزیز صدیقی سے
حقائق پر مبنی چند سوالات شوکت عزیز صدیقی سے

شوکت عزیز صدیقی نے قومی سلامتی کے اداروں پر شدید الزامات عائد کیے ، اس کے بعد  مذکورہ الزامات کی تحقیقات سپریم جوڈیشل کونسل کے ذریعہ کی گئیں ، جس میں پتا چلا کہ یہ تمام الزامات بے بنیاد اور غلط ہیں۔ شوکت عزیز صدیقی انکوائری کے دوران ان اداروں کے خلاف کوئی درست ثبوت دینے میں ناکام رھے۔انہیں ملازمت سے ہٹا دیا گیا تو اب ایک بار پھرانہوںنے ریاستی اداروں پر الزامات لگانا شروع کردیئے ہیں۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ قومی سلامتی کے اداروں کے خلاف اس طرح کے خدشات اٹھانے پر شوکت عزیز صدیقی کے خلاف کس قسم کی قانونی کارروائی کی جائے گی؟

شوکت عزیز صدیقی کے ماضی پر بات کی جائے تو اس پر بھی کافی سوالات اٹھ چکے ہیں۔  اور ان کی سروس کا وقت بھی ختم ہورہا ہے۔ اس بات کا بھی امکان موجود ہے کہ اسے اپنے گذشتہ اعمال کی سزا ملے گی۔ ممکن ہے کہ ریاستی اداروں کے خلاف ایسی زبان استعمال کرکے وہ آئندہ فیصلے سے قبل بے قصور بننا چاہ رہے ہوں؟

 شوکت عزیز صدیقی نے کب کب اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کیا

شوکت عزیز صدیقی نے اپنی خدمات کے دوران تین مکانات تبدیل کردیئے ،انہوں نے سی ڈی اے پر دباؤ ڈالا ہے اور اس ادارے کو مجبور کیا ہے کہ وہ اپنے  منتخب  کردہ مکان کی تزئین و آرائش کے لئےٹیکس پئیر کے 12.1 ملین روپے کی رقم استعمال کرے۔

سپریم جوڈیشل کونسل کی انکوائری میں یہ ثابت ہوا ہے کہ شوکت عزیز صدیقی کے ایک مخصوص سیاسی جماعت سے روابط ہیں ، یہاں ایک سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ تکنیکی بنیادوں پر تحقیقات  بھی کی جانی چاہئیں  کہ اس سیاسی جماعت  کی حمایت کرنے میں انہوں نے کس قسم کے فوائد حاصل کیے ہیں؟

سپریم جوڈیشل کونسل نے بھی اپنے فیصلے میں لکھا ہے کہ ڈی جی آئی ایس آئی اور آئی ایس آئی پر لگائے گئے تمام الزامات غلط ہیں اور شوکت عزیز صدیقی ان کے خلاف کچھ ثابت کرنے سے قاصر تھے۔

شوکت عزیز صدیقی کے کرپشن کے بے شمار اسکینڈل ہیں جیسے اس نے سی ڈی اے پر دباؤ ڈالا ہے کہ وہ اپنے قریبی ساتھی کے لئے پیٹرول پمپ کے لئے این او سی جاری کرے۔ شوکت صدیقی نے اس این او سی کے لئے کس قسم کی مراعات لی  اور انہوں نے یہ رقم کہاں خرچ کی ہے؟

شوکت عزیز صدیقی نے سی ڈی اے پر دباؤ ڈالا اور 3 پلاٹوں کی جگہ تبدیل کی اور ایف 11 میں الاٹمنٹ حاصل کی جو اسلام آباد کے مہنگے ترین سیکٹرز میں سے ایک ہے۔ بدلے میں انہوں  نے کیا مراعات لی ہیں؟

یہ بھی پڑھیں:ویریفائڈ پیج پر بھارتی ایڈمن سامنے آنے کے بعد حامد میر کا پیج سے لا تعلقی کا اعلان

 ذاتی زندگی سے کچھ سوالات

شوکت عزیز صدیقی نے 3 شادیاں کیں ، انہوں نے اپنے کاغذات میں 2 شادیاں ظاہر کیں جبکہ تیسری تاحال انکشاف نہیں کیا گیا۔کیا خلاقی طور پر ایک منصف کو ایسا کرنا زیب دیتا ہے؟

شوکت عزیز صدوقی نے پہلی شادی 5 سال کم عمر خواتین کے ساتھ کی جبکہ دوسری 24 سال کی چھوٹی لڑکی سے جو اپنے بیٹے سے صرف 3 سال بڑی تھی۔ کوئی بھی اس فعل سے اپنی ذہنی سطح اور اخلاقی بدعنوانی کا پتہ لگاسکتا ہے۔

شوکت عزیز صدیقی نے اپنے بیٹے عبداللہ کو سیکیورٹی کمیشن آف پاکستان میں بطور”اسسٹنٹ دیر لیگل” شامل کرنے کے لئے اپنی طاقت کا استعمال کیا ہے۔ انکا بیٹا  منشیات کا عادی ہے اور اس کے برتاؤ اور مختصر حاضری کے خلاف مختلف شکایات ریکارڈ میں ہیں۔ عبداللہ صدیقی کے ساتھ منشیات فراہم کرنے والے کو پہلے ہی گرفتار کرلیا گیا ہے اور اس کا بیان ہے کہ وہ  عبداللہ کو منشیات سپلائی کرتا ہے

شوکت صدیقی کی جانب سے اپنے الزامات کا ایک بھی ثبوت نہ دیا جانا اور اسکے ساتھ ساتھ اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال اور پھر ایک مخصوص سیاسی جماعت کی سپورٹ۔۔اس سارے معاملے پر آپ کیا کہتے ہیں؟ کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار ضرو کریں اور مزید تفصیل کے لئے یہ ویڈیو دیکھیں

Facebook Comments

comments

Comments are closed.